تحریر: محمد کلیم (منگھیراں شریف)

بیٹی!  ذرا  کیلنڈر دیکھنا، یہ  مہینہ  کتنے  دن  کا ہے؟ دودھ  والے  کا حساب کرنا  ہے۔ دادی  نے  عالیہ  سے  کہا۔ دادی اماں! کیلنڈر دیکھنے کی  کیا  ضرورت  ہے،  میں ابھی چند سیکنڈ میں بتائے دیتی ہوں، یہ دیکھیے۔  یہ کہہ کر عالیہ  نے بائیں ہاتھ کی مٹھی بند  کی  اور  انگلیوں  کے  جوڑوں پر دائیں  ہاتھ کی انگلی  رکھ  کر بولی: یہ ابھرے ہوئے جوڑ اکتیس دن  کے ہیں اور ان کے درمیان جو  گڑھے  ہیں یہ تیس دن  کے۔ اب ان  جوڑوں اور گڑھوں پر  انگلی  رکھ  کر  گنتی  جائیے، جنوری، فروری، مارچ، اپریل، مئی، جون، جولائی، اگست۔ یہ مہینہ اگست  کا  ہے  اور  اگست جوڑ  پر آیا ہے  لہذا یہ اکتیس کا دن  ہے۔  بارہ  مہینوں  میں  صرف  فروری  ایسا مہینہ ہے جو اٹھائیس یا انتیس دن کا ہوتا ہے۔ باقی سب مہینے تیس یا اکتیس دن  کے  ہوتے ہیں۔

شیئر کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
1259
15